کراچی سے ملنے والی انسانی ہڈیاں میڈیکل طلبہ کی پریکٹس والی نکلیں تفتیش مکمل

کراچی سے ملنے والی انسانی ہڈیاں میڈیکل طلبہ کی پریکٹس والی نکلیں تفتیش مکمل

اس ضمن میں ایس ایس پی سینٹرل عارف اسلم راؤ کا کہنا ہے کہ پارک میں کھدائی کے دوران 5 ہڈیاں نکلیں تھیں جو انسانی ہاتھ اور پیر کی تھیں، ہڈیاں ٹکڑوں میں ملیں تھیں، جنہیں جانچ کیلئے ڈاؤ یونیورسٹی اسپتال کے سینئر ڈاکٹرز کو بھیج رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ  تفصیلی میڈیکل رپورٹ آنے کے بعد ہڈیوں کے بارے میں مزید پتہ چل سکے گا۔

یاد رہے گزشتہ دن ناظم آباد میں واقع معروف انو بھائی پارک سے  ترقیاتی کام کے دوران  بڑی تعداد میں انسانی ہڈیاں برآمد ہوئی تھیں۔اس ضمن میں ایس ایس پی سینٹرل عارف اسلم نے بتایا ہے کہ انو بھائی پارک سے ملنے والی ہڈیاں انسانی اعضا کی ہیں جوپارک کے قریب میں واقع اسپتال کی انتظامیہ نے دفن کی ہیں۔پولیس کے مطابق تعمیراتی ٹھیکیدار نے ہڈیاں برآمد ہونے پر پولیس کو اطلاع دی جس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر تمام ہڈیاں قبضے میں لے لیں۔

انہوں نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ آپریشن کے دوران نکالی جانے والی ہڈیاں دفن کی گئیں تھیں جو ترقیاتی کام کے دوران کھدائی میں برآمد ہوئیں ہیں انہیں اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔کراچی کے علاقے ڈیفنس فیز ون سے دو روز قبل ملی انسانی ہڈیاں میڈیکل طلبہ کی پریکٹس والی نکلیں۔کراچی ساؤتھ پولیس کی درخواست پر بننے والے میڈیکل بورڈ نے رپورٹ جاری کردی ہے جس کے مطابق ہڈیاں فرنش ہیں اور میڈیکل طلبہ کو پڑھانے کے استعمال والی ہیں۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ ہڈیوں پر پینسل اور مارکر کے نشانات ہیں جو طلبہ کو پڑھاتے ہوے لگائے گئے ہیں جبکہ ہڈیوں میں تین کھوپڑیاں اور دیگر جسم کے اعضاء کی ہڈیاں شامل ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں