کراچی(کرائم رپورٹر)روزنامہ کراچی 21نیوز کی خبرپرپولیس کا ایکشن’ بدنام زمانہ جوئے کے اڈے کا سرغنہ عمران عرف مانی فرار ہوگیا

کراچی(کرائم رپورٹر)روزنامہ کراچی 21نیوز کی خبرپرپولیس کا ایکشن’ بدنام زمانہ جوئے کے اڈے کا سرغنہ عمران عرف مانی فرار ہوگیا

تین کارندے پکڑے گئے عمران مانی’ محمد علی عرف کانڑا’ کاشف قینچی’ جٹیا اور لال داد سمیت سرپرست مبینہ جعلی صحافی اشفاق جعفری اور وقاص میمن سے متعلق تحقیقات شروع کردی گئیں۔ تمام کی گرفتاری بھی متوقع ہے۔ذرائع نے بتایا کہ مچھر کالونی میں پولیس کی بھاری نفری کا بدنام زمانہ قمار باز عمران مانی کے جوئے کے اڈے پر چھاپہ’ عمران مانی فرار تین ملزمان گرفتار کرلئے گئے پولیس نے داؤ پر لگی رقم بھی تحویل میں لے لی’ عمران مانی سے متعلق ذرائع نے بتایا کہ لیاری سے تعلق رکھنے والے جعلی صحافی اورگینگ وار کے مفرور دہشت گرد وصی لاکھو کے ترجمان اشفاق جعفری کی عمران مانی کو مکمل سرپرستی حاصل ہے عمران مانی کے خلاف اخبار میں خبریں لگی تو جعلی صحافی اشفاق جعفری آپے سے باہر ہوگیا .

اور معتبر روزنامہ سمیت متعدد صحافیوں کے خلاف من گھڑت منصوبہ بندی کے تحت مسیجز بناکر چلانے لگا’ ذرائع نے بتایا کہ وقاص میمن کراچی شہر کے کرائم رپورٹروں کے نام پر عمرانی مانی سے 15ہزار روپے ہفتہ جبکہ اشفاق جعفری شراب کی بوتل اور 7ہزار ہفتہ مبینہ طورپر وصول کرنے میں ملوث ہیں۔ عمران مانی کے اڈے پر پولیس کی چھاپہ مار کارروائی کے بعد جعلی صحافیوں نے تحریری بناکر صحافتی اداروں سے تعلق رکھنے والے افراد کی کردار کشی شروع کردی۔تفصیلات کے مطابق مچھر کالونی کے نیازی محلہ حاجی گل بادشاہ چوک کے قریب ڈاکس پولیس کی بھاری نفری نے بدنام زمانہ پولیس کو مطلوب ملزم عمران عرف مانی کی موجودگی کی اطلاع پر نیازی محلہ محمدی کالونی سمیت اطراف کے علاقوں کو حصار میں لیکر مانی کی تلاش میں تابڑ توڑ کارروائیاں کیں’ پولیس نے مانی کے اڈے سے غلام رسول’ شیراز محمد اور رمضان کو گرفتار کرلیا جبکہ انتہائی مطلوب ملزم مانی فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔ ڈاکس پولیس کے مطابق مانی کی تلاش میں چھاپہ مار کارروائیاں جاری ہیں۔

عمران عرف مانی گزشتہ عرصہ دراز سے لیاری سمیت مچھر کالونی میں بڑے پیمانے پر جوئے کا سسٹم آپریٹ کررہا ہے جس کے خلاف کئی ایف آئی آردرج کئے گئے مگر مانی گرفتار نہ ہوسکا ڈاکس پولیس نے مانی کے خلاف مقدمہ نمبر 364/2021 درج کرتے ہوئے اسے مفرور قرار دیدیا’ ذرائع نے بتایا کہ مانی کا نیٹ ورک چلانے کیلئے محمد علی عرف کانڑا ‘ نال کا پٹلڑا چلانے کیلئے کاشف عرف قینچی’ منیجر جٹیا اور ڈبے کیلئے لال داد کی خدمات لے رکھی ہیں مچھر کالونی میں عمران مانی خوف کی علامت بن چکا ہے جو خبروں کی اشاعت کے بعد تاحال روپوش ہے ذرائع نے بتایا کہ مانی اس سے قبل گینگ وار کے دور میں لیاری میں سرگرم انداز میں جوئے کا نیٹ ورک آپریٹ کرتاتھا جس نے ایک مرتبہ پھر گینگ وار کے بدنام زمانہ کرداروں سے مدد کی اپیل کی ہے۔ ڈاکس پولیس دعویٰ کرتی ہے کہ مانی کو جلد گرفتار کرلیاجائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں